اُردو انجمن

 


مصنف موضوع: Aek Ghazal Islah kay liyay  (پڑھا گیا 2330 بار)

0 اراکین اور 1 مہمان یہ موضوع دیکھ رہے ہیں

غیرحاضر Mahtab Hashmi

  • Adab Aashnaa
  • *
  • تحریریں: 13
جواب: Aek Ghazal Islah kay liyay
« Reply #15 بروز: مئی 23, 2016, 12:58:48 شام »

Janab Dr. Suhail Malik Sahib
Assalam o alaikum
Aap ki muhabbat o enayat ka shukr ada karne ki sakat to khud me nahi pata keh mujh jese tifl e maktab ke lie aap ne apna qimti waqt nikala aor behtreen rae se nawaza magar sirf itna arz karta hon keh agar hamen koi apna le to ham umr bhar picha chorne wale nahi chahe woh kitna hi daor lagae ham to piche bhagte rahen ge aor yahan to ilm ka husool he  aor ham piyase hen aap se ye jaam ham pite rahen ge.Inshaa ALLAH
Duaon me yaad rakhye ga

غیرحاضر Mahtab Hashmi

  • Adab Aashnaa
  • *
  • تحریریں: 13
جواب: Aek Ghazal Islah kay liyay
« Reply #16 بروز: مئی 24, 2016, 01:34:26 شام »
Janab Isma'eel Ajaaz Sahib
Assalam o alaikum
is bar urdu me likhne ki koshish ki he,inage me likh kr file upload kar raha hon,kia aesa karna theek rahe ga?
 

غیرحاضر vb jee

  • Adab Fehm
  • ****
  • تحریریں: 1273
  • جنس: مرد
جواب: Aek Ghazal Islah kay liyay
« Reply #17 بروز: مئی 25, 2016, 01:32:41 صبح »
Assalam o alaikum
Malik Sahib Aap ne mujh nacheez ki baton ko ahmiyat di aor jawab se nawaza is ke lie behad mamnoon hon,jahan tak urdu typing ka talluq he to main IN PAGE par apne ashaar waghera likh kar yahan file upload kar deta hon,agar koi tareeqa he jis se yahan direct urdu me likha ja sake to as rae karam bata den, mujhe bhi roman me likhna acha nahi lagta.mujhe is Anjuman me shamil hoe chand rose hi hoe he aap jese doston aor ustadon ki madad hasil rahi to In shaa ALLAH kuch samajhne ke qabil bhi ho sakon ga.Duaaon ka talib
Mahtab Hashmi




محترم جناب مہتاب ہاشمی صاحب! السلام علیکم

سب سے پہلے تو اس بزم میں دل کی گہرائیوں سے خوش آمدید۔ آپ کو یہاں دیکھ کر ہمیں اپنا وقت یاد آ گیا، جب اسی طرح ہم بھی یہاں آئے تھے۔ اسی طرح خصوصاً محترم اسماعیل اعجاز صاحب نے اور باقی اساتذہ نے ہمیں خوش آمدید بھی کہا اور ایسے ہی قدم قدم چلنا سکھایا۔ اب کُچھ نا کُچھ رینگ لیتے ہیں اور جہاں ٹھوکر کھاتے ہیں انہیں احباب کا سہارہ لیتے ہیں۔ آپ تو پہلے سے بھی کافی سمجھ رکھتے ہیں سو احباب کی رہنمائی میں انشااللہ جلد ہی سمجھ جائیں گے، کہ یہ اتنا مشکل کام نہیں ہے۔ بس کُچھ اہم چیزیں سمجھ آ جائیں تو سب آسان ہو جاتا ہے۔

آپ نے یہاں بلا واسطہ اردو رسم الخط میں لکھنے سے متعلق معلومات چاہی ہیں۔ ہم جو طریقہ استعمال کرتے ہیں وہ آپ تک پہنچائے دیتے ہیں۔ اگر آپ بھی مائیکروسافٹ ونڈوز استعمال کر رہے ہیں تو یہ طریقہ ہمارے علم کے حساب سے، بہتر ہے۔

پہلے یہ لنک جو ہم دے رہے ہیں اسے اپنے کمپیوٹر میں نسب (انسٹال) کر لیجے۔

urdu.ca/Phonetic-Keyboard.exe

اس کے بعد اپنے کمپیوٹر کے کنٹرول پینل میں جا کر ریجنل سیٹنگز میں انگریزی کے ساتھ اُردو زبان اور phonetic keyboard کو بھی شامل کر لیجے۔ اب آپ صرف یہاں نہیں بلکہ اپنے کمپیوٹر میں کہیں بھی اردو لکھ سکیں گے۔ دونوں زبانوں کے تبادلہ کے لیئے، کی بورڈ میں بائیں جانب موجود Alt + Shift یعنی دونوں کو اکٹھا دبایا جا سکتا ہے۔ یا پھر کمپیوٹر سکرین پر موجود وقت کے قریب language bar سے دونوں زبانوں کو ضرورت کے مطابق تبدیل کیا جاسکتا ہے۔

امید ہے کہ ہماری کوشش، آپ کے کسی کام آ سکے گی۔ اگر ہم وضاحت نہ کر پائے ہوں اور کسی قسم کی مشکل کا سامنا ہو، تو مطلع کیجے گا۔ ہمارا جو حال ہے سو حاضِر نظر آئے گا۔ انشااللہ


دُعا گو

« آخری ترمیم: مئی 25, 2016, 05:48:31 صبح منجانب vb jee »
گنگناتی رهے گی انھیں تو سدا
اتنے نغمے تِرے نام کر جائیں گے

غیرحاضر Ismaa'eel Aijaaz

  • Saaheb-e-adab
  • *****
  • تحریریں: 3259
جواب: Aek Ghazal Islah kay liyay
« Reply #18 بروز: مئی 25, 2016, 01:47:18 صبح »
Janab Isma'eel Ajaaz Sahib
Assalam o alaikum
is bar urdu me likhne ki koshish ki he,inage me likh kr file upload kar raha hon,kia aesa karna theek rahe ga?



جناب محترم مہتاب ہاشمی صاحب
وعلیکم السلام ورحمتہ اللہ وبرکاتہ
جنابِ عالی بہت نوازش آپ کی کہ آپ نے اپنی تحریر کو اردو رسم الخط میں پیش کیا اللہ آپ کو جزائے خیر عطا فرمائے اللہ آپ کو دونوں جہانوں کی عزتیں عطا فرمائے
آپ کی غزل دیکھی ماشاءاللہ بہت خوب بہت اچھے مضامین ہیں آپ نے وزن بھی ذیل میں پیش کیا
فاعلن فاعلن فاعلن فعولن آئیے مجوّزہ وزن پر آپ کی غزل کو پرکھتے ہیں ، مگر اس سے پہلے ہم اس جانچ کو اور سہل بنانے کے لیے اعدادی شکل میں دیکھتے ہیں ، ہم یک حرفی آواز کو یا حرف کو 1 کی قیمت دیتے ہیں اور دوحرفی آواز یا وہ آواز جو دو حروف سے وجود پائے اسے 2 کی قیمت دیتے ہیں ، اس لیے سب سے پہلے وہ وزن جو آپ نے اپنی تحریر کے لیے تجویز فرمایا اس کی قیمت جانتے ہین

فاع لن ۔۔۔۔ فاع لن ۔۔۔۔ فاع لن  ۔۔۔۔  ف عو لن
212 ۔۔۔۔۔۔۔ 212 ۔۔۔۔۔۔ 212   ۔۔۔۔۔ 221
اب آپ یہ دیکھیے کہ آپ نے جو وزن پیش کیا وہ
دو ایک دو ۔۔۔۔ دو ایک دو ۔۔۔۔۔ دو ایک دو ۔۔۔۔۔ ایک دو دو

ہے اب  ہم آپ کی تحریر کی تقطیع کرتے ہیں

دنیا نئی ہم بسا لیتے تو اچھا تھا
دن یا نَ ۔۔۔ ئی  ہم بَ ۔۔۔۔  سا  لے تِ ۔۔۔۔  تُ اچ چا ۔۔۔۔ تا
122 ۔۔۔۔۔    122     ۔۔۔۔    122     ۔۔۔۔۔۔ 221 ۔۔۔۔ 2
مفعو لُ ۔ مفعو لُ ۔۔۔   مفعو لُ ۔۔۔۔ فَعولن ۔۔۔ فع
جب کہ یہ کسی معروف بحر کا وزن نہیں ہے
آپ کو وزن درکار ہے
212 ۔۔۔۔۔۔۔ 212 ۔۔۔۔۔۔ 212   ۔۔۔۔۔ 221

مطلب آپ نے جو مصرع بُنا وہ آپ کے مجوّزہ وزن پر پورا نہیں اترا گویا غلط ہے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دشت میں گھر بنا لیتے تو اچھا تھا
دش ت مے ۔۔۔۔  گر بَ نا  ۔۔۔۔ لے تے تُ ۔۔۔۔ اچ چا تا
212 ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔  212 ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 122 ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 222
فاعلن ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ فاعلن ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ مفعولُ ۔۔۔۔۔۔۔ مفعولن
جب کہ یہ کسی معروف بحر کا وزن نہیں ہے
آپ کو وزن درکار ہے
212 ۔۔۔۔۔۔۔ 212 ۔۔۔۔۔۔ 212   ۔۔۔۔۔ 221

مصرع مجوّزہ وزن پر پورا نہیں اترا 
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

آپ کے علم میں ہوگا کہ حرف ھ  اور ں کو محسوب نہیں کیا جاتا اس کے علاوہ جن الفاظ کے آخر میں الف ہ ی ے آئے تو ہم انہیں بھی حسبِ ضرورت محسوب کرتے ہیں اگر آواز کو کھینچنا ہے اور اگر آواز کا اختصار کے ساتھ ادا کرنا ہے تو ان حروف کو گرا کر ان سے ماقبل حرف کو متحرک کر دیتے ہیں زیر زبر پیش کی علامت کے ساتھ ہیں مثال کے طور پر کا  کو کَ جا کو جَ سے بدل کر / کی کو کِ اور جی کو جِ / خستہ کو خس تَ گزشتہ کو گُ زش تَ صدمہ کو صدمَ سے بدل کر تجھے کو  تُ جے یا تُ جِ  مجھے کو مُ جے یا مُ جِ اس طرح کی آوازوں سے جڑے سبھی الفاظ کو عروض کی سہولت کے پیشِ نظر چھوٹی بڑی آوازوں میں بدلا اور محسوب یا گرایا جا سکتا ہے
   


آنسوؤں نے کیا رسوا ہی ہے ہمیں
اا سُ ؤ ۔۔۔۔۔ نے کِ یا ۔۔۔۔ رس وَ ہی ۔۔۔۔۔ ہے ہَ مے
212۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 212 ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 212 ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 212
فاعلن ۔۔۔۔۔۔۔۔ فاعلن ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ فاعلن ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ فاعلن
یہ مصرع وزن میں ہے مگر بحر متدراک مثمن سالم میں ہے جب کہ ہی ہے نے مصرعے کی دلکشی کو ماند کیا ہے

آپ کو وزن درکار ہے
212 ۔۔۔۔۔۔۔ 212 ۔۔۔۔۔۔ 212   ۔۔۔۔۔ 221


مصرع مجوّزہ وزن پر پورا نہیں اترا 
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

درد دل کا چھپا لیتے تو اچھا تھا
در دُ دل ۔۔۔۔۔۔ کا چُ پا ۔۔۔۔۔ لے تے تُ ۔۔۔۔۔ اچ چا تا
فاعلن۔۔۔۔۔۔۔۔۔ فاعلن۔۔۔۔۔۔۔۔۔ مفعول ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ مفعولن
212 ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 212 ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 122 ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 222

آپ کو وزن درکار ہے
212 ۔۔۔۔۔۔۔ 212 ۔۔۔۔۔۔ 212   ۔۔۔۔۔ 221


مصرع مجوّزہ وزن پر پورا نہیں اترا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

حق گوئی پر خفا ہوتے ہیں سب لوگ

حق گُ ئی ۔۔۔۔۔ پر خ فا ۔۔۔۔ ہو تے ہِ ۔۔۔۔۔ سب لو گ
فاعلن۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ فاعلن ۔۔۔۔۔۔۔۔ مفعول ۔۔۔۔۔۔۔۔ مفعول
212 ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 212 ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 122 ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 122

آپ کو وزن درکار ہے
212 ۔۔۔۔۔۔۔ 212 ۔۔۔۔۔۔ 212   ۔۔۔۔۔ 221


مصرع مجوّزہ وزن پر پورا نہیں اترا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
قفل لب پر لگا لیتے تو اچھا تھا

قُف ل لب ۔۔۔۔ پر لَ گا ۔۔۔۔ لے تے تُ ۔۔۔۔ اچ چا تا
212 ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 212 ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 122  ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 222

آپ کو وزن درکار ہے
212 ۔۔۔۔۔۔۔ 212 ۔۔۔۔۔۔ 212   ۔۔۔۔۔ 221

مصرع مجوّزہ وزن پر پورا نہیں اترا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
لوگوں نے ہیں اٹھائے پتھر ہاتھوں میں
لو گو نِ ۔۔۔ ہے اُ ٹا ۔۔۔۔ ئے پت تر ۔۔۔۔۔۔ ہا تُ مے
مفعولُ ۔۔۔۔۔۔ فاعلن ۔۔۔۔۔۔۔ مفعولن ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ فاعلن
122 ۔۔۔۔۔۔۔ 212 ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 222 ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 212
آپ کو وزن درکار ہے
212 ۔۔۔۔۔۔۔ 212 ۔۔۔۔۔۔ 212   ۔۔۔۔۔ 221

مصرع مجوّزہ وزن پر پورا نہیں اترا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

تیغ تم بھی اٹھا لیتے تو اچھا تھا

تے غ تم ۔۔۔۔۔۔ بی اُ ٹا ۔۔۔۔۔ لے تے تُ ۔۔۔۔۔ اچ چا تا
فاعلن ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ فاعلن ۔۔۔۔۔۔۔ مفعولُ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ مفعولن
212 ۔۔۔۔۔۔۔ 212 ۔۔۔۔۔۔ 122    ۔۔۔۔۔ 222
آپ کو وزن درکار ہے
212 ۔۔۔۔۔۔۔ 212 ۔۔۔۔۔۔ 212    ۔۔۔۔۔ 221

مصرع مجوّزہ وزن پر پورا نہیں اترا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

روٹھا وہ ہم سے تو نا آیا لوٹ کے

رو ٹا وُ ۔۔۔۔ ہم سے تُ ۔۔۔۔۔ نَ اا یا ۔۔۔۔۔ لو ٹ کے
مفعولُ ۔۔۔۔۔۔۔ مفعول ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ فاعلن ۔۔۔۔۔۔۔ فاعلن
122 ۔۔۔۔۔۔۔۔ 122 ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 212 ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 212

آپ کو وزن درکار ہے
212 ۔۔۔۔۔۔۔ 212 ۔۔۔۔۔۔ 212   ۔۔۔۔۔ 221

مصرع مجوّزہ وزن پو پورا نہیں اترا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
ہم ہی اس کو منا لیتے تو اچھا تھا

ہم ہِ اس ۔۔۔۔۔ کو مَ نا ۔۔۔۔۔ لے تے تُ ۔۔۔۔۔۔ اچ چا تا
فاعلن ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ فاعلن ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ مفعولُ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ مفعولن
212 ۔۔۔۔۔۔۔ 212 ۔۔۔۔۔۔ 122    ۔۔۔۔۔ 221
آپ کو وزن درکار ہے

212 ۔۔۔۔۔۔۔ 212 ۔۔۔۔۔۔ 212   ۔۔۔۔۔ 221
مصرع مجوّزہ وزن پو پورا نہیں اترا

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
لیکن اگر ہم عروض کی مدد حاصل کریں تو آپ کی غزل بحر مشاکل میں ہے جس کا وزن ہے
فاعلاتن ۔۔۔۔۔۔۔ مفاعیلن ۔۔۔۔۔۔۔۔ مفاعیلن

آئیے اسے پرکھتے ہیں
 آپ کی غزل کے مطلعے کا مصرع ہے

دشت میں گھر بنا لیتے تو اچھا تھا
دش ت مے گر ۔۔۔۔ بَ نا لے تے ۔۔۔۔۔ تُ اچ چا تا
فاعلاتن ۔۔۔۔۔۔۔ مفاعیلن ۔۔۔۔۔۔۔۔ مفاعیلن
2212 ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 2221 ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 2221

اس بحر کو سامنے رکھ کر کچھ تراش خراش کے بعد آپ کی مکمل غزل پیش ہے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دشت میں گھر بنا لیتے تو اچھا تھا
ہم بھی دنیا بسا لیتے تو اچھا تھا

آنسوؤں نے کیا رسوا سدا ہم کو
درد دل کا چھپا لیتے تو اچھا تھا

حق گوئی پر خفا ہوتے ہیں سب ہم سے
قفل لب پر لگا لیتے تو اچھا تھا

لوگوں نے ہاتھوں میں پتّھر اٹھائے ہیں
تیغ تم بھی اٹھا لیتے تو اچھا تھا

روٹھ کر وہ گیا تو پھر نہیں آیا
کاش اس کو منا لیتے تو اچھا تھا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
مہتاب ہاشمی
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

اللہ کرے زورِ قلم اور زیادہ

اردو کو تختہ کلیدی کی مدد سے براہِ راست لکھیے اس لنک پر جائیے

لکھنے کے بعد کنٹرول اے کنٹرول ایکس یا کنٹرول سی کر کے جہاں چسپاں کرنا ہے وہاں کنٹرول وی کیجیے جو کچھ آپ نے لکھا ہے چسپاں ہو جائے گا
تجربہ کیجیے اور لطف اٹھائیے
اپنی دعاؤں میں یاد رکھیے
دعاگو
http://www.techmynd.com/tools/write-in-Urdu.php
« آخری ترمیم: مئی 25, 2016, 09:13:51 شام منجانب Ismaa'eel Aijaaz »
محبتوں سے محبت سمیٹنے والا
خیال آپ کی محفل میں آچ پھر آیا

خیال

muHabbatoN se muHabbat sameTne waalaa
Khayaal aap kee maiHfil meN aaj phir aayaa

(Khayaal)

غیرحاضر Mahtab Hashmi

  • Adab Aashnaa
  • *
  • تحریریں: 13
جواب: Aek Ghazal Islah kay liyay
« Reply #19 بروز: مئی 25, 2016, 02:30:03 شام »
جناب اسمعیل اعجاز صاحب
السلام’علیکمؒ
    اللہ تعالی آپ کو جزاٗ خیر سے نوازے۔آپ نے میری بہت ہمت افزائی کی ھےاور مجھ میں شاعری کو سمجھنے کی خواہش کو مزید آگے بژھایا ھے۔دلجمعی اور شوق سے آپ کی تحاریر پژھتا ہوں اور سمجھنے کی کوشش کرتا ہوں۔ نئی غزل(اچھا تھا) کو بہت اعتماد سے پیش کیا تھا مگر کیا کہیں صاحب ہم خوش فہمی کا شکار تھے، بنیادی بات کو ہی سمجھ نہ پائے اور غزل ٹائیں ٹائیں فش قرار پائی۔ مگر ہم نے بھی تہیہ کر لیا ہے میدان چھوژ کر نہیں بھاگیں گے ، ہمیں گرنے کا ڈر نہیں کیونکہ آپ جیسے استاد تھامنے کو موجود ہیں۔
آپ کی بتائی پوئی site سے اردو فونٹ انسٹال کر لیے ہیں اور اب واقعی لکھنے کا مزا آ رہا ھے۔ ایک شعر حاضر خدمت ہے توجّہ کا طلبگار ھوں،دعاوٗں میں یاد رکھیے گا۔
واسلام
 مہتاب ہاشمی
شعر ارض ہے۔
ہم تہی دست نہہیں تیرے جانے کے بعد
غم ہجرساتھ ھے اور تیری بیوفائی ھے

غیرحاضر Ismaa'eel Aijaaz

  • Saaheb-e-adab
  • *****
  • تحریریں: 3259
جواب: Aek Ghazal Islah kay liyay
« Reply #20 بروز: مئی 25, 2016, 09:47:52 شام »
جناب اسمعیل اعجاز صاحب
السلام’علیکمؒ
    اللہ تعالی آپ کو جزاٗ خیر سے نوازے۔آپ نے میری بہت ہمت افزائی کی ھےاور مجھ میں شاعری کو سمجھنے کی خواہش کو مزید آگے بژھایا ھے۔دلجمعی اور شوق سے آپ کی تحاریر پژھتا ہوں اور سمجھنے کی کوشش کرتا ہوں۔ نئی غزل(اچھا تھا) کو بہت اعتماد سے پیش کیا تھا مگر کیا کہیں صاحب ہم خوش فہمی کا شکار تھے، بنیادی بات کو ہی سمجھ نہ پائے اور غزل ٹائیں ٹائیں فش قرار پائی۔ مگر ہم نے بھی تہیہ کر لیا ہے میدان چھوژ کر نہیں بھاگیں گے ، ہمیں گرنے کا ڈر نہیں کیونکہ آپ جیسے استاد تھامنے کو موجود ہیں۔
آپ کی بتائی پوئی site سے اردو فونٹ انسٹال کر لیے ہیں اور اب واقعی لکھنے کا مزا آ رہا ھے۔ ایک شعر حاضر خدمت ہے توجّہ کا طلبگار ھوں،دعاوٗں میں یاد رکھیے گا۔
واسلام
 مہتاب ہاشمی
شعر ارض ہے۔
ہم تہی دست نہہیں تیرے جانے کے بعد
غم ہجرساتھ ھے اور تیری بیوفائی ھے


جناب محترم مہتاب ہاشمی
وعلیکم السلام ورحمتہ اللہ وبرکاتہ

جناب کوئی ایسی شرمندگی والی خجالت والی ندامت والی بات نہیں سیکھنے والے اگر غلطی نہیں کریں گے تو سیکھیں گے کیسے ؟
یہاں کوئی شخص دعویٰ نہیں کر سکتا اپنی مہارت کا کم از کم میں تو بالکل نہیں ہاں سیکھنے کی غرض سے میں چلا آتا ہوں اور آپ سبھی احباب سے سیکھتا ہوں
آپ کی غزل کا وزن
فاعلاتن مفاعیلن مفاعیلن ہے یہ بحرِ مشاکل کے افاعیل کی معروف مزاحف شکلیں ہیں مشکل بحر ہے اس میں کچھ لکھنا آسان نہیں ہے بہر حال اپ نے ہمت کی اور خوب کوشش فرمائی میں نے آپ کی تحریر کو کسی حد تک اس بحر میں ڈھالنے کی کوشش کی ہے جو صرف سمجھنے اور سمجھانے کی حد تک ہے آپ اسے بہت بہتر کہہ سکتے ہیں بس ذرا ہمت سے کام لیجیے گھبرائیے نہیں


اس بحر کو سامنے رکھ کر کچھ تراش خراش کے بعد آپ کی مکمل غزل پیش ہے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دشت میں گھر بنا لیتے تو اچھا تھا
ہم بھی دنیا بسا لیتے تو اچھا تھا

آنسوؤں نے کیا رسوا سدا ہم کو
درد دل کا چھپا لیتے تو اچھا تھا

حق گوئی پر خفا ہوتے ہیں سب ہم سے
قفل لب پر لگا لیتے تو اچھا تھا

لوگوں نے ہاتھوں میں پتّھر اٹھائے ہیں
تیغ تم بھی اٹھا لیتے تو اچھا تھا

روٹھ کر وہ گیا تو پھر نہیں آیا
کاش اس کو منا لیتے تو اچھا تھا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
مہتاب ہاشمی
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

آپ کا شعر
ہم تہی دست نہہیں تیرے جانے کے بعد
غم ہجرساتھ ھے اور تیری بیوفائی ھے

 ذرا سی ردوبدل کے ساتھ وزن میں لانا مجبوری ہے

ہم تہی دست نہیں ہیں ترے جانے کے بعد
ہجر کا غم ہے تری یاد ہے تنہائی ہے

مجھے خوشی اور اطمینان اس بات کا ہے کہ میری ذات آپ کے لیے خیر اور منفعت بخش ثابت ہوئی اللہ کا بڑا کرم ہے اللہ کا احسان ہے ، آپ اپنی کوشش جاری رکھیے اساتذہ کا مطالعہ کیجیے مستند بحور کو سامنے رکھ کر مشق کیجیے
ہم جب تک اپنے آپ کو بلا تردد بلا جھجک بلا حجت بلا اعتراض کسی کے حوالے نہیں کردیتے اس وقت تک وہ علم جس کے حصول کے لیے ہم کوشاں ہیں شائق ہیں ہمیں نفع نہیں پہنچاتا ہماری عقل و خرد پر تالے پڑے رہتے ہیں جیسے ہی ہم مزاحمت ختم کر کے اپنا آپ اسے سونپتے ہیں جس سے کچھ حاصل کرنا چاہتے ہیں تو مطلوبہ خیال نظریہ علم ہماری عقل و خرد تک رسائی حاصل کر لیتا ہے اور جو بات کتابیں کھنگالتے ہوئے زندگی بتا کر سمجھ نہیں آتی چٹکی بجاتے ہی گھر کر جاتی ہے اور جو ہم کہنا چاہتے ہیں سننا چاہتے ہیں آسان ہو جاتا ہے آپ سے گزارش ہے کہ 
آسان عروض اور نکاتِ شاعری میں مستند بحور کو جناب سرور عالم راز سرور صاحب نے ہم سبھی کے ذوق و شوق اس کی افزائش اور آبیاری کے لیے اسباق کی شکل میں عروض سے جڑی مثالوں اور اساتذہ کرام کی شاعری سے مزین کر رکھا ہے اس قیمتی علم و ادب کا مطالعہ کیجیے اور اسے سامنے رکھتے ہوئے طبع آزمائی کیجیے
یہاں انجمن میں طرحی مشاعرے کا ایک سلسلہ چلا تھا جو کچھ عرصے سے رکا ہوا ہے میری اردو انجمن سے درخواست ہے کہ نو آموزشعراء کی حوصلہ افزائی اور رہنمائی کے لیے اس سلسلے کو دوبارہ سے شروع کیا جائے تاکہ طبع آزمائی کی فضا بنے سیکھنے سکھناے کا ماحول قائم ہو
تمام اساتذہ کرام اور جناب وی بی جی جو اردو انجمن کی جان ہیں ان سے درخواست ہے کہ نو آموز شعرا کی دلجوئی اور معاونت کے لیے اس بیڑے کو پار لگانے کا ذمہ اٹھائیں اور مجھے بھی اپنے ساتھ چلتے رہنے کے مواقعے عنایت فرمائیں
اللہ آپ سبھی کو دونوں جہانوں کی خوشیاں اور عزّتیں مرحمت فمائے
آپ کی دعاؤں کا طلبگار
« آخری ترمیم: مئی 25, 2016, 09:57:31 شام منجانب Ismaa'eel Aijaaz »
محبتوں سے محبت سمیٹنے والا
خیال آپ کی محفل میں آچ پھر آیا

خیال

muHabbatoN se muHabbat sameTne waalaa
Khayaal aap kee maiHfil meN aaj phir aayaa

(Khayaal)

غیرحاضر Mahtab Hashmi

  • Adab Aashnaa
  • *
  • تحریریں: 13
جواب: Aek Ghazal Islah kay liyay
« Reply #21 بروز: مئی 29, 2016, 04:34:19 صبح »
جناب اسمعیل اعجاز صاحب
السلام ّعلیکمؒ
     عرض خدمت ہے کہ آپ نے میری  تحریر کا بہت مفصل جواب دیا ھے اس کے لیے بیحد ممنون ھوں۔ آپ نے آسان عروض کے بارے میں بتایا تھا میں آج کل اس کا مطالعہ کر رہا ہوں ۔ جناب سرور صاحب نے بہت ہی خوبصورت انداز میں سمجھایا ہے اور میں اسے سمجھنے کی بھرپور کوشش کر رہا ھون ۔ آپ جیسے استادوں کی نظرِکرم رہی تو انشآاللہ کچھ سمجھنے کے قابل ہو سکوں گا ۔
دعائوں میں یاد رکھیے گا
والسلام
مہتاب ہاشمی

غیرحاضر Mahtab Hashmi

  • Adab Aashnaa
  • *
  • تحریریں: 13
جواب: Aek Ghazal Islah kay liyay
« Reply #22 بروز: جنوری 12, 2018, 11:07:17 صبح »
اسلام علیکم
ایک شعر اصلاح کے لیے پیش کر رھا ہوں امید ہے رہنماٰی فرماینگے۔جزاک اللہ
 
                                 ھم تہی دست نہیں تیرے جانے کے بعد
                                 غم ہجر ساتھ ھے اور تیری بیوفای ھے
                                           مہتاب ہاشمی

غیرحاضر سرور عالم راز

  • Muntazim-o-Mudeer
  • Saaheb-e-adab
  • *****
  • تحریریں: 6348
  • جنس: مرد
    • Kalam-e-Sarwar
جواب: Aek Ghazal Islah kay liyay
« Reply #23 بروز: جنوری 14, 2018, 11:53:15 شام »
اسلام علیکم
ایک شعر اصلاح کے لیے پیش کر رھا ہوں امید ہے رہنماٰی فرماینگے۔جزاک اللہ
 
                                 ھم تہی دست نہیں تیرے جانے کے بعد
                                 غم ہجر ساتھ ھے اور تیری بیوفای ھے
                                           مہتاب ہاشمی

مکرمی مہتاب صاحب: سلام مسنون
آپ کا خط باعث مسرت ہوا۔ کافی عرصے کے بعد آپ انجمن میں واپس آئے ہیں۔ کیا ہی اچھا ہو کہ جلدی جلدی آنے کی کوشش کریں۔ محفل کی رونق بڑھ جائے گی۔ شکریہ۔ آپ کا شعر دیکھا۔ یہ معلوم ہوا کہ آپ کے پاس عروض پر میری کتاب ہے۔ شعر کا خیال بہت ہی خوب ہے البتہ دونوں مصرعے وزن سے خارج ہیں۔ آپ ایک بار یہ کریں کہ کتاب کا مطالعہ کر کے شعر کا ایک وزن متعین کریں اور پھر دونوں مصرعوں کو اس ایک وزن پر لائیں۔ موجودہ صورت میں دونوں مصرعے ایک وزن کے ہی نہیں بلکہ کسی وزن کے نہیں ہیں۔ آپ کی توجہ اور محنت کی ضرورت ہے۔ امید ہے کہ میری بات کا برا نہیں مانیں گے۔ محنت وہ بہتر ہوتی ہے جو خود کی جائے۔ اس کے بعد کوئی کمی رہ جائے گی تو میں ضرور خدمت کروں گا۔ انشا اللہ

سرورعالم راز




غیرحاضر Mahtab Hashmi

  • Adab Aashnaa
  • *
  • تحریریں: 13
جواب: Aek Ghazal Islah kay liyay
« Reply #24 بروز: جنوری 15, 2018, 02:11:14 شام »
محترم سرور صاحب
اسلام علیکم
بے حد شکرگزار ہوں کہ اپ نع اپنی محبت سے نوازا،تقریبا ایک سال کے بعد بزم میں حاضر ہوا ہوں،اب اپ کی رہنمایٗ میں کچھ سیکھنے کی کوشش کروں گا۔انشااللہ
دعاوں کا طالب
مہتاب ہاشمی

 

Copyright © اُردو انجمن