اُردو انجمن

 


مصنف موضوع: بگڑ گئی ہیں صورتیں کئی  (پڑھا گیا 106 بار)

0 اراکین اور 1 مہمان یہ موضوع دیکھ رہے ہیں

غیرحاضر Zeeshan_Haider

  • Adab Aashnaa
  • *
  • تحریریں: 41
بگڑ گئی ہیں صورتیں کئی
« بروز: اگست 09, 2017, 03:32:19 صبح »
السلام و علیکم!

ایک تازہ کلام پیشِ خدمت ہے، اپنی قیمتی آرا سے نوازیں:


ذرا ہمیں بھی دیکھ کر بتا نصابِ عشق میں
کہیں پہ ہے ہمارا ذکر بھی کتابِ عشق میں

مجھے ڈرائے ہے کوئی مرے شبابِ عشق میں
یہ کون ہے کہاں سے آ گیا ہے خوابِ عشق میں

بگڑ گئی ہیں صورتیں کئی سرابِ عشق میں
کہاں اُتر پڑے ہیں آپ بھی خرابِ عشق میں

خرَد نکالتی ہے عشق میں زیاں، فقط زیاں
نہیں نہیں مجھے یقیں نہیں حسابِ عشق میں

دِیارِ عشق میں سنبھل سنبھل کے تو بھی رکھ قدم
یہاں بہت سے آ گئے زدِ عتابِ عشق میں

والسلام
ذیشان



غیرحاضر Ismaa'eel Aijaaz

  • Saaheb-e-adab
  • *****
  • تحریریں: 3180
جواب: بگڑ گئی ہیں صورتیں کئی
« Reply #1 بروز: اگست 13, 2017, 12:23:49 صبح »
السلام و علیکم!

ایک تازہ کلام پیشِ خدمت ہے، اپنی قیمتی آرا سے نوازیں:


ذرا ہمیں بھی دیکھ کر بتا نصابِ عشق میں
کہیں پہ ہے ہمارا ذکر بھی کتابِ عشق میں

مجھے ڈرائے ہے کوئی مرے شبابِ عشق میں
یہ کون ہے کہاں سے آ گیا ہے خوابِ عشق میں

بگڑ گئی ہیں صورتیں کئی سرابِ عشق میں
کہاں اُتر پڑے ہیں آپ بھی خرابِ عشق میں

خرَد نکالتی ہے عشق میں زیاں، فقط زیاں
نہیں نہیں مجھے یقیں نہیں حسابِ عشق میں

دِیارِ عشق میں سنبھل سنبھل کے تو بھی رکھ قدم
یہاں بہت سے آ گئے زدِ عتابِ عشق میں

والسلام
ذیشان


جناب محترم ذیشان حیدر صاحب
سدا سلامت رہیے صاحب آپ کی دلکش کلام دو تین دن سے دیکھ رہا ہوں مگر وقت نہیں نکال پا رہا تھا کہ کچھ عرض خدمت کروں
ماشااللہ بہت دلکش کلام ہے میری جانب سے ڈھیروں داد قبول فرمائیے

ایک شعر کو دیکھ کر ایک خیال ذہن میں ایک سوال آیا سوچا اس پر بات کی جائے

خرَد نکالتی ہے عشق میں زیاں، فقط زیاں
نہیں نہیں مجھے یقیں نہیں حسابِ عشق میں

سوال اس شعر کے بارے میں ہے کہ خرد عشق میں خسارے کی بات کرتی ہے کس نے ایسا کہا کیا یہ محض آپ کا خیال ہے یا واقعی ایسا سچ ہے اس پر روشنی ڈالیے

ایک سوال آپ کی نذر


خرَد نکالتی ہے عشق میں زیاں، فقط زیاں
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کہاں لکھا ہوا ہے یہ بتا حسابِ عشق میں
ازل سے لے کے آج تک جو عشق بھی کیا گیا
 ہر ایک داستاں رقم ہوئی کتابِ عشق میں

جب کہ
 نہیں نہیں مجھے یقیں نہیں حسابِ عشق میں

یہ دوسرا مصرع بہت دلکش انداز لیے ہے

بہر حال صاحب ایک خیال تھا جس کا ظہار کرنا اور آپ تک پہنچانا اس لیے مقصود تھا کہ اسی بہانے کچھ بات چیت ہو جائے
 مزید نگارشات عنایت فرمائیے
اللہ کرے زور ِ قلم اور زیادہ
اللہ سدا سلامت رکھے دونوں جہانوں کی عزّتیں عطا فرمائے

دعاگو
محبتوں سے محبت سمیٹنے والا
خیال آپ کی محفل میں آچ پھر آیا

خیال

muHabbatoN se muHabbat sameTne waalaa
Khayaal aap kee maiHfil meN aaj phir aayaa

(Khayaal)

غیرحاضر Zeeshan_Haider

  • Adab Aashnaa
  • *
  • تحریریں: 41
جواب: بگڑ گئی ہیں صورتیں کئی
« Reply #2 بروز: اگست 15, 2017, 01:03:09 صبح »
السلام و علیکم!

ایک تازہ کلام پیشِ خدمت ہے، اپنی قیمتی آرا سے نوازیں:


ذرا ہمیں بھی دیکھ کر بتا نصابِ عشق میں
کہیں پہ ہے ہمارا ذکر بھی کتابِ عشق میں

مجھے ڈرائے ہے کوئی مرے شبابِ عشق میں
یہ کون ہے کہاں سے آ گیا ہے خوابِ عشق میں

بگڑ گئی ہیں صورتیں کئی سرابِ عشق میں
کہاں اُتر پڑے ہیں آپ بھی خرابِ عشق میں

خرَد نکالتی ہے عشق میں زیاں، فقط زیاں
نہیں نہیں مجھے یقیں نہیں حسابِ عشق میں

دِیارِ عشق میں سنبھل سنبھل کے تو بھی رکھ قدم
یہاں بہت سے آ گئے زدِ عتابِ عشق میں

والسلام
ذیشان


جناب محترم ذیشان حیدر صاحب
سدا سلامت رہیے صاحب آپ کی دلکش کلام دو تین دن سے دیکھ رہا ہوں مگر وقت نہیں نکال پا رہا تھا کہ کچھ عرض خدمت کروں
ماشااللہ بہت دلکش کلام ہے میری جانب سے ڈھیروں داد قبول فرمائیے

ایک شعر کو دیکھ کر ایک خیال ذہن میں ایک سوال آیا سوچا اس پر بات کی جائے

خرَد نکالتی ہے عشق میں زیاں، فقط زیاں
نہیں نہیں مجھے یقیں نہیں حسابِ عشق میں

سوال اس شعر کے بارے میں ہے کہ خرد عشق میں خسارے کی بات کرتی ہے کس نے ایسا کہا کیا یہ محض آپ کا خیال ہے یا واقعی ایسا سچ ہے اس پر روشنی ڈالیے

ایک سوال آپ کی نذر


خرَد نکالتی ہے عشق میں زیاں، فقط زیاں
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کہاں لکھا ہوا ہے یہ بتا حسابِ عشق میں
ازل سے لے کے آج تک جو عشق بھی کیا گیا
 ہر ایک داستاں رقم ہوئی کتابِ عشق میں

جب کہ
 نہیں نہیں مجھے یقیں نہیں حسابِ عشق میں

یہ دوسرا مصرع بہت دلکش انداز لیے ہے

بہر حال صاحب ایک خیال تھا جس کا ظہار کرنا اور آپ تک پہنچانا اس لیے مقصود تھا کہ اسی بہانے کچھ بات چیت ہو جائے
 مزید نگارشات عنایت فرمائیے
اللہ کرے زور ِ قلم اور زیادہ
اللہ سدا سلامت رکھے دونوں جہانوں کی عزّتیں عطا فرمائے

دعاگو



محترم اسمعیل اعجاز صاحب

حوصلہ افزائی کا بہت بہت شکریہ۔

آپ نے جس مصرعہ کی بابت بات کی۔ میرا خیال یہ ہے کہ عشق دل کا معاملہ ہے مگر عقل و دماغ کا کام وسواسے، شک ڈالنا اور بس ممکنہ نقصانات کی نشاہدی کرنا ہے۔

دوسرا مصرعہ مجھے بھی بہت ہی دلکش لگا تھا اسی وجہ سے میں اسی مصرعہ کو اسی طرح استعمال کرنا چاہتا تھا۔  آپ نے جو اصلاح فرمائی ہے یقیناً اس کے بارے بھی غور کرتا ہوں۔

والسلام 

 

Copyright © اُردو انجمن