اُردو انجمن

 


مصنف موضوع: اس طرح عہدِ تمنّا کو گزارے جائیے  (پڑھا گیا 191 بار)

0 اراکین اور 1 مہمان یہ موضوع دیکھ رہے ہیں

غیرحاضر Ismaa'eel Aijaaz

  • Saaheb-e-adab
  • *****
  • تحریریں: 3214
اس طرح عہدِ تمنّا کو گزارے جائیے
« بروز: ستمبر 12, 2017, 12:27:25 صبح »

سُنیے پڑھو اور پڑھیے ___ !!

اس طرح عہدِ تمنّا کو گزارے جائیے
اُن کو خاموشی کے لہجے میں پُکارے جائیے

عشق کا منصب نہیں آوازۂ لفظ و بیاں
آنکھوں ہی آنکھوں میں ہر شکوہ گزارے جائیے

دیکھیے رُسوا نہ ہو جائے کہیں رسمِ جنوں
اپنے دیوانے کو اِک پتّھر تو مارے جائیے

آئینے پر جو گُزرنا ہو گُزر جائے مگر
آپ یُوں ہی زُلفِ برہم کو سنوارے جائیے

جذبۂ دل کا تقاضہ ہے کہ بازی جیت لُوں
احتیاطِ عشق کہتی ہے کہ ہارے جائیے

ہو سکے تو دل کی حالت خود ہی آ کر دیکھیے
غیر کی سُنیے نہ کہنے پر ہمارے جائیے

کُچھ تو لُطفِ لمسِ آغوشِ تلاطم چاہیے
تا کُجا اخگرؔ کنارے ہی کنارے جائیے

✍️سید حنیف اخگر ملیح آبادی مرحوم



....


محبتوں سے محبت سمیٹنے والا
خیال آپ کی محفل میں آچ پھر آیا

خیال

muHabbatoN se muHabbat sameTne waalaa
Khayaal aap kee maiHfil meN aaj phir aayaa

(Khayaal)

غیرحاضر سرور عالم راز

  • Muntazim-o-Mudeer
  • Saaheb-e-adab
  • ******
  • تحریریں: 6238
  • جنس: مرد
    • Kalam-e-Sarwar
جواب: اس طرح عہدِ تمنّا کو گزارے جائیے
« Reply #1 بروز: ستمبر 13, 2017, 10:19:10 صبح »

سُنیے پڑھو اور پڑھیے ___ !!

اس طرح عہدِ تمنّا کو گزارے جائیے
اُن کو خاموشی کے لہجے میں پُکارے جائیے

عشق کا منصب نہیں آوازۂ لفظ و بیاں
آنکھوں ہی آنکھوں میں ہر شکوہ گزارے جائیے

دیکھیے رُسوا نہ ہو جائے کہیں رسمِ جنوں
اپنے دیوانے کو اِک پتّھر تو مارے جائیے

آئینے پر جو گُزرنا ہو گُزر جائے مگر
آپ یُوں ہی زُلفِ برہم کو سنوارے جائیے

جذبۂ دل کا تقاضہ ہے کہ بازی جیت لُوں
احتیاطِ عشق کہتی ہے کہ ہارے جائیے

ہو سکے تو دل کی حالت خود ہی آ کر دیکھیے
غیر کی سُنیے نہ کہنے پر ہمارے جائیے

کُچھ تو لُطفِ لمسِ آغوشِ تلاطم چاہیے
تا کُجا اخگرؔ کنارے ہی کنارے جائیے

✍️سید حنیف اخگر ملیح آبادی مرحوم



....



عزیز مکرم خیال صاحب: سلام مسنون
مرحوم سید حنیف اخگر صاحب سے میرے قریبی مراسم تھے۔ بہت؛ ہی ؛شریف ، خٖلیق اور نفیس انسان تھے اور اتنے ہی اچھے شاعر۔ نیویارک سے وہ ڈیلس آگئے تھے اور پھر یہیں ان کی وفات بھی ہوئی۔ اللہ مغفرت فرمائے۔ پیدا کہاں ہیں ایسے پراگند؛ہ طبع لوگ!
ان کی غزل روایات کی پاسدار ہے اور ساتھ ہی ساتھ اثر پذیری اور نفاست بیان سے مملو ہے۔ ایسے کلام سے ہم سب بہت کچھ سیکھ سکتے ہیں۔ کلام عنایت کرنے کا بہت شکریہ۔

سرور عالم راز



 

Copyright © اُردو انجمن