اُردو انجمن

 


مصنف موضوع: تریاق  (پڑھا گیا 403 بار)

0 اراکین اور 1 مہمان یہ موضوع دیکھ رہے ہیں

غیرحاضر REHANA AHMAD

  • Adab Shinaas
  • **
  • تحریریں: 280
  • جنس: عورت
تریاق
« بروز: جنوری 27, 2018, 12:07:09 شام »
تریاق

آستیں میں لئے جو پھرتے ہو
سانپ سارے نکال کر لاﺅ
مجھ کو ڈسوا کے دیکھ لو ان سے
ایک بھی بچ رہا تو پھر کہنا
زہر تیری جفاﺅں کا برسوں
قطرہ قطرہ اتارا ہے دل میں
زہر کا توڑ زہر ہوتا ہے
جس کی اب تو کمی نہیں مجھ میں

(ریحانہ احمد جاناںؔ)


" زندگی کا مقصد یہ دیکھنا نہیں کہ دور دھندلکوں میں کیا ہےِ، بلکہ جو کچھ ہمارے سامنے ہے اسے سرانجام دینا ہے"   ڈیل کارنیگی

 

Copyright © اُردو انجمن