اُردو انجمن

 


مصنف موضوع: اب اور کیا کسی سے مراسم بڑھائیں ہم  (پڑھا گیا 104 بار)

0 اراکین اور 1 مہمان یہ موضوع دیکھ رہے ہیں

غیرحاضر Ismaa'eel Aijaaz

  • Saaheb-e-adab
  • *****
  • تحریریں: 3296
اب اور کیا کسی سے مراسم بڑھائیں ہم
« بروز: جولائی 12, 2018, 03:57:01 صبح »
قارئین کرام آداب عرض ہیں ، ایک پرانا کلام ذرا نئے انداز سے پیشِ خدمت ہے امید ہے پسند آئے گا اپنی آرا سے نوازیے

عرض کیا ہے


۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

کیا کچھ گزر گئی ہے وہ کیسے بتائیں ہم
اب اور کیا کسی سے مراسم بڑھائیں ہم

دل درد درد اور جگر زخم زخم ہے
ایسے میں کیا کسی سے بھلا دل لگائیں ہم

آنکھیں بہت اداس ہیں دل بے قرار ہے
اس پر بضد ہیں آپ کہ اب مسکرائیں ہم

کوئی تو ہو جو ہم کو بھی اپنا کہے یہاں
کیسے کسی کے دل میں نیا گھر بسائیں ہم

کیوں جاتے جاتے آپ یہ تنہائی دے گئے
تنہائیوں سے رشتہ کہاں تک نبھائیں ہم

اب کون اپنے دل میں جگہ دے ہمیں خیالؔ
دروازہ کس کا جا کے کہیں کھٹکھٹائیں ہم

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
طالبِ نظر

اسماعیل اعجاز خیالؔ


محبتوں سے محبت سمیٹنے والا
خیال آپ کی محفل میں آچ پھر آیا

خیال

muHabbatoN se muHabbat sameTne waalaa
Khayaal aap kee maiHfil meN aaj phir aayaa

(Khayaal)

غیرحاضر nawaz

  • Adab Shinaas
  • **
  • تحریریں: 431
جواب: اب اور کیا کسی سے مراسم بڑھائیں ہم
« Reply #1 بروز: جولائی 13, 2018, 01:23:45 صبح »
محترم اسماعیل اعجاز صاحب سلامِ مسنون

ایک رواں دواں الفاظ کی عمدہ اور چشت بندش کے ساتھ
غزل پڑھنے کو ملی اچھی کاوش پر داد دینا اچھا لگتا ہے سو داد

جناب مقطع میں قافیہ کھٹکھٹائں کچھ بھایا نہیں کیا اسکو بقیہ
قافیوں سے مماثلت نہں دی جا سکتی  کیا مشورہ ہے آپ کا
خوش رہیں ہنستے رہیں غموں کی بستی سے دور پڑاوء ڈالیں
دعا گو                     نواز

غیرحاضر Ismaa'eel Aijaaz

  • Saaheb-e-adab
  • *****
  • تحریریں: 3296
جواب: اب اور کیا کسی سے مراسم بڑھائیں ہم
« Reply #2 بروز: جولائی 17, 2018, 06:34:28 صبح »
محترم اسماعیل اعجاز صاحب سلامِ مسنون

ایک رواں دواں الفاظ کی عمدہ اور چشت بندش کے ساتھ
غزل پڑھنے کو ملی اچھی کاوش پر داد دینا اچھا لگتا ہے سو داد

جناب مقطع میں قافیہ کھٹکھٹائں کچھ بھایا نہیں کیا اسکو بقیہ
قافیوں سے مماثلت نہں دی جا سکتی  کیا مشورہ ہے آپ کا
خوش رہیں ہنستے رہیں غموں کی بستی سے دور پڑاوء ڈالیں
دعا گو                     نواز


 جناب محترم نواز صاحب

وعلیکم السلام ورحمتہ اللہ وبرکاتہ

جنابِ عالی بہت عنایت ہے آپ کی آپ کو میرا کلام پسند آیا اللہ آپ کو شاد و آباد رکھے ، مقطع میں آپ نے کھٹکھٹانے پر ناسپندیدگی کا اظہار فرمایا ہے اگر ہم کھٹکھٹائیں گے نہیں تو دوسری صورت میں بجائیں گے اور بجانا بھی بھلا نہیں لگتا کہ کوئی جا کر دروازہ بجائے سلجھا ہوا لفظ ’’ دستک دینا ‘‘ ہوتا ہے

چلیے اگر آپ کو کھٹکھٹانا پسند نہیں آ رہا تو اسے ہم یوں کہے دیتے ہیں

 
اب کون اپنے دل میں جگہ دے ہمیں خیالؔ
دستک کسی کے در پہ کہاں دے کے آئیں ہم

شاید اس طرح کہنا آپ کو بھلا لگے
خیر صاحب ایک بار پھر آپ کی محبتوں عنایتوں کے لیے شکرگزار ہوں ، اللہ آپ کو دنیا واور آخرت کی عزتیں مرحمت فرمائے
اپنا بہت خیال رکھیے اپنی دعاؤں میں یاد رکھیے
دعاگو
محبتوں سے محبت سمیٹنے والا
خیال آپ کی محفل میں آچ پھر آیا

خیال

muHabbatoN se muHabbat sameTne waalaa
Khayaal aap kee maiHfil meN aaj phir aayaa

(Khayaal)

غیرحاضر nawaz

  • Adab Shinaas
  • **
  • تحریریں: 431
جواب: اب اور کیا کسی سے مراسم بڑھائیں ہم
« Reply #3 بروز: جولائی 17, 2018, 10:31:08 صبح »
محترم  اسماعیل اعجاز صاحب سلامِ مسنون

اب مجھے کوئ تعارض نہیں مقطع کو ایک آسان اور شعر کے
حسن میں اضافہ کے ساتھ شعر کو ڈھالا؛؛؛ بہت خوب شکریہ

دستک کسی کے در پہ کہاں دے کے آئیں ہم
سلامتی اور ترقی آپکا مقدر بنے دعا گو         نواز

غیرحاضر Ismaa'eel Aijaaz

  • Saaheb-e-adab
  • *****
  • تحریریں: 3296
جواب: اب اور کیا کسی سے مراسم بڑھائیں ہم
« Reply #4 بروز: گزشتہ روز بوقت 08:53:05 شام »
محترم  اسماعیل اعجاز صاحب سلامِ مسنون

اب مجھے کوئ تعارض نہیں مقطع کو ایک آسان اور شعر کے
حسن میں اضافہ کے ساتھ شعر کو ڈھالا؛؛؛ بہت خوب شکریہ

دستک کسی کے در پہ کہاں دے کے آئیں ہم
سلامتی اور ترقی آپکا مقدر بنے دعا گو         نواز


جناب محترم نواز صاحب
وعلیکم السلام ورحمتہ اللہ وبرکاتہ

جنابِ عالی اللہ آپ کو شاد و آباد رکھے میرے لیے باعثِ مَسرّت ہے باعثِ عزت ہے کہ آپ کو میرے اس شعر میں تبدیلی پسند آئی آپ کی دعاؤں کے لیے ممنون ہوں

اللہ آپ کو دونوں جہانوں کی عزتیں مرحمت فرمائے

اپنا بہت خیال رکھیے یونہی اپنی دعاؤں میں یاد رکھیے
دعاگو
محبتوں سے محبت سمیٹنے والا
خیال آپ کی محفل میں آچ پھر آیا

خیال

muHabbatoN se muHabbat sameTne waalaa
Khayaal aap kee maiHfil meN aaj phir aayaa

(Khayaal)

 

Copyright © اُردو انجمن