اُردو انجمن

 


مصنف موضوع: حالات کے قدموں پہ قلندر نہیں گرتا  (پڑھا گیا 1032 بار)

0 اراکین اور 1 مہمان یہ موضوع دیکھ رہے ہیں

غیرحاضر زرقا مفتی

  • Naazim-o-Mudeer
  • Saaheb-e-adab
  • ******
  • تحریریں: 5001
    • my blog
حالات کے قدموں پہ قلندر نہیں گرتا
« بروز: نومبر 02, 2009, 08:44:45 صبح »
حالات کے قدموں پہ قلندر نہیں گرتا
ٹوٹے بھی جو تارا تو زمیں پر نہیں گرتا

گرتے ہیں سمندر میں بڑے شوق سے دریا
لیکن کسی دریا میں سمندر نہیں گرتا

سمجھو وہاں پھلدار شجر کوئی نہیں ہے
وہ صحن کہ جِس میں کوئی پتھر نہیں گرتا

اِتنا تو ہوا فائدہ بارش کی کمی سے
اِس شہر میں اب کوئی پھسل کر نہیں گرتا

انعام کے لالچ میں لکھے مدح کسی کی
اتنا تو کبھی کوئی سخنور نہیں گرتا

حیراں ہے کوئی روز سے ٹھہرا ہوا پانی
تالاب میں اب کیوں کوئی کنکر نہیں گرتا

اس بندہء خوددار پہ نبیوں کا ہے سایا
جو بھوک میں بھی لقمہء تر پر نہیں گرتا

کرنا ہے جو سر معرکہِ زیست تو سُن لے
بے بازوئے حیدر، درِ خیبر نہیں گرتا

قائم ہے قتیل اب یہ میرے سر کے ستوں پر
بھونچال بھی آئے تو مرا گھر نہیں گرتا



غیرحاضر عامر عباس

  • Naazim
  • Saaheb-e-adab
  • *****
  • تحریریں: 2333
  • جنس: مرد
Re: حالات کے قدموں پہ قلندر نہیں گرتا
« Reply #1 بروز: نومبر 02, 2009, 09:08:46 صبح »
Haalaat ke qadmoN pah qalandar naheeN girtaa
TooTe bhee jo taaraa to zameeN par naheeN girtaa

girte haiN samandar meiN baRe shauq se daryaa
lekin kisee daryaa meiN samandar naheeN girtaa

samjho wahaaN phal_daar shajar ko`ee naheeN hai
woh seHn keh jis meiN ko`ee patthar naheeN girtaa

itnaa to hu`aa faa`idah baarish kee kamee kaa
is shehr meiN ab ko`ee phisal kar naheeN girtaa

in'aam ke laalach meiN likhe madH kisee kee
itnaa to kabhee ko`ee suKHanwar naheeN girtaa

HairaaN hai ko`ee roz se Thahraa hu`aa paanee
taalaab meiN ab kyuN ko`ee kaNkar naheeN girtaa

us bandah e KHud_daar pah nabiyoN kaa hai saayah
jo bhook meiN bhee luqmah e tar par naheeN girtaa

karnaa hai jo sar ma'rakah e zeest to sun le
be_baazoo e Haidar, dar e KHaibar naheeN girtaa

qaa`im hai :Qateel: ab yeh mire sar ke sutooN par
bhauNchaal bhee aa`e to miraa ghar naheeN girtaa

غیرحاضر عامر عباس

  • Naazim
  • Saaheb-e-adab
  • *****
  • تحریریں: 2333
  • جنس: مرد
Re: حالات کے قدموں پہ قلندر نہیں گرتا
« Reply #2 بروز: نومبر 02, 2009, 09:10:41 صبح »
Zarqa jee, salaam.
janaab :Qateel Shifaa`ee: kee yeh GHazal laRakpan ke zamaaneh meiN paRhee thee aur apne KHazaaneh meiN saNbhaal kar rakkhee thee.. bahot 'umdah aur KHoobsoorat GHazal hai aur tab bhee pasand thee aur ab bhee is kaa har she'r taazah meHsoos hotaa hai.

is KHoobsoorat intiKHaab par daad aur anjuman meiN pesh karne ke liye naacheez kaa shukriyah qubool keejiye.

muKHlis
Aamir Abbas

غیرحاضر زرقا مفتی

  • Naazim-o-Mudeer
  • Saaheb-e-adab
  • ******
  • تحریریں: 5001
    • my blog
Re: حالات کے قدموں پہ قلندر نہیں گرتا
« Reply #3 بروز: نومبر 03, 2009, 12:13:16 صبح »
Aamir bhai
ghazal paRhne aur isse roman meN likhne ke liye aap ki mamnoon huuN
wasalam
zarqa

 

Copyright © اُردو انجمن